Urdu transcript of AEDC family awareness video

Transcript of Awareness for Families video (3:03)

Narrator


Australian Early Development Census (AEDC)

کے ذریعے ملک بھر سے بچپن کی

ابتدائ نشوو نما کے بارے میں معلومات اکٹھی کی جاتی ہیں۔

اساتذہ ہر تین سال بعد سال اول کے ایسے بچوں کے بارے میں جو کل وقتی بنیادوں پر سکول میں ہوں Early Development Instrument کا آسٹریلوی ورژن مکمل کرتے ہیں۔

Early Development Instrument

کا آسٹریلوی ورژن جن سطح پر بچوں کی نشوونما ماپتا ہےأن میں:

جسمانی صحت و تندرستی، سماجی قابلیت، جذباتی پختگی، سکول سے متعلقہ لسانی و علمی مہارت

اظہار خیال سے متعلقہ مہارت اور معلومات عامہ شامل ہیں۔

کنڈرگارٹن کے اساتذہ بچوں کے لیے اس دستاویزکو اپنے کلاس روم مشاہدات کی بنیاد پر کلاس میں مکمل کرتے ہیں، ۔ AEDC کوئی ٹیسٹ نہیں ہے اور جمع شدہ معلومات کو نہ تو اب اور نہ ہی مستقبل میں استعمال کیا جائیگا۔

AEDC

ڈیٹا ایسی معلومات مہیا کرتا ہے جس سے صحت، تعلیم اور کمیونٹی پالیسی بنانے اور منصوبہ بندی میں مدد ملتی ہے۔

جمع کردہ معلومات وہ کام نمایاں کرتی ہیں جو درست طور پر ہورہے ہیں اور بچوں

اور ان کے خاندان کی امداد میں بہتری لانے کے لیے کیا کرنےکی ضرورت ہے۔

AEDC

لکھنے پڑھنے اور حساب میں حاصل کی گئی ان علمی کامیابیوں کی نشاندہی بھی کرتا ہے

جن کی سکول میں گذارے گئے سالوں میں جانچ کی جاتی ہے۔

AEDC

اس بات کی ایک سرسری تصویر بھی دیتا ہے کہ اسکول میں بچے متعلقہ شعبوں کے مقابلےمیں کس طرح بڑھ رہے ہیں

اور ان معلومات کو کسی انفرادی بچے کے حوالے سے رپورٹ نہیں کیا جاتا، بلکہ یہ پورے گروپ کے بارے میں ہوتی ہیں۔

AEDC

بچوں کی نشوونما کی سرسری تصویر بچوں کے بطور ایک گروپ کے دیتا ہے اور نہ کہ ہر ایک بچے کے لیے۔

رپورٹیں سکول، کمیونٹی، ریاستی اور قومی سطحوں پر دستیاب ہیں۔

ریاستی، کمیونٹی اور قومی رپورٹیں عوامی سطح پر دستیاب ہیں۔

اسکولوں کومعلومات اکٹھے ہونے کے بعد ایک اختصار شدہ رپورٹ موصول ہوگی ۔

ٹرم 1 کے اختتام پر اسکول آپ کے بچے کی AEDC میں شرکت کے بارے میں مزید معلومات فراہم کرے گا۔

اگرآپ نہیں چاہنے کہ استاد آپ کے بچے کے لیے سروے مکمل کرے، تو آپ اسکول کے پرنسپل سے رابطہ کرسکتے ہیں۔

AEDC

سروے کے نتائج کو اختصارشدہ فیصدوں میں رپورٹنگ کی تما م سطحوں پر رپورٹ کیا جاتا ہے۔

انفرادی طلبا کی رازداری اور پرائیویسی کو محفوظ رکھا جاتا ہے۔

اسکولوں کو بچوں کی صحت اور نشوونما کے لیے منصوبہ بندی کرنے کے قابل ہونے کی ضرورت ہے۔

کنڈرگارٹن کے استاد کو اپنے بچے کی شمولیت کے ذریعے سروے مکمل کرنے کی اجازت دینا اس بات

کو یقینی بنانے کے لیے اہم ہےکہ ہمیں ان نتائج تک دسترس حاصل ہو سکے۔

اسکولوں، کمیونیٹیز اور حکومتوں کے یہ سمجھنے میں مدد دینے کے لیےکہ ا سکول کے

پہلے سال میں بچوں کی نشوونما میں کیسے بہترین طریقے سے مدد دی جاسکتی ہے

اور یہ منصوبہ بندی کرنے کے لیے کہ

بچوں ، خاندانوں اور کمیونیٹیز کی کیسے بہترین طور پر امداد کی جا سکتی ہے۔

اب ہمیشہ سے زیادہ، بچوں کی صحت اور نشوونما ایک اہم ترجیح ہے۔

مزید معلومات AEDC کی قومی ویب سائیٹ پر دستیاب ہے۔

اگر آپ کے مزید کوئی سوالات ہیں تو آپ اسکول کے پرنسپل اور AEDC اسکول کوآرڈینیٹر سے بات کرسکتے ہیں۔

End of Transcript.

Return to top of page Back to top